Dinutvei.no Logo Nasjonal veiviser
ved vold og overgrep

MiRA سینٹر کیا ہے؟

کیا آپ اقلیتی پس منظر کی خاتون ہیں ہے جنکے ساتھ تشدد اور استحصال ہوا ہے؟ آپ MiRA مرکز سے رابطہ کر سکتی ہیں جو اقلیتی گروہوں کی خواتین کے لئے اور تشدد کے خلاف کام کرتا ہے۔

MiRA سینٹر ناروے میں اقلیتی گروہوں کی خواتین کے رہنے کے حالات کو بہتر بنانے کے لئے کام کرتی ہے.

یہ مرکز مندرجہ ذیل کے ذریعہ تشدد کے سبھی طریقوں کے خلاف کام کرتا ہے:

  • بحران میں مدد اور صلاح
  • وکیل کے ساتھ مفت صلاح
  • صلاح کے گروہ
  • ورکشاپ
  • تھیم پر مبنی شامیں
  • کورسز

آپ گمنام رہ سکتے ہیں، یعنی MiRA مرکز سے رابطہ کرنے پر آپ کو اپنا نام دینے کی ضرورت نہیں ہے۔ عملہ رازداری کا پابند ہے اور اس وجہ سے اسے زندگی اور صحت کے لیے خطرہ لاحق ہونے کی صورت میں یا آپ کی اجازت کے بغیر دوسروں کے ساتھ آپ سے متعلق کسی بھی معلومات کا اشتراک کرنے کی اجازت نہیں ہے۔ مرکز کے دوسرے صارفین کو دوسروں کے ساتھ آپ کے معاملہ سے متعلق کسی بھی چیز پر بات چیت کرنے کی اجازت نہیں ہے۔ MiRA سینٹر ترجمان فراہم کر سکتا ہے لیکن ایسے عملے کو کام میں لگاتا ہے جو متعدد زبانوں کے جانکار ہیں.

آپ کو ریفرل کی ضرورت نہیں ہے اور فون یا ای میل سے خود بھی رابطہ کر سکتے ہیں یا آپ مرکز کا دورہ کر سکتے ہیں. MiRA مرکز مستقل عملہ اور رضاکار دونوں کی بحالی کرتا ہے. عملہ میں سماجی کارکنان اور سماجی سائنس دانوں شامل ہوتے ہیں جنہیں مائیگریشن، جنس، وغیرہ کے بارے میں بہت زیادہ علم ہوتی ہے.

خدمت مفت ہے۔

تارکین وطن اور پناہ گزین خواتین کے لئے MiRA مرکز غیر سیاسی، غیر حکومتی ادارہ ہے اور اسکا تعلق کسی بھی مذہبی گروہ سے نہیں ہے۔ MiRA مرکز کو مرکزی یا مقامی حکومت سے فنڈ ملتے ہیں۔ اس مرکز میں مختلف عطیہ دہندگان
کی طرف سے فنڈ شدہ پروجیکٹ چلتے ہیں۔

MiRA مرکز Storgata 53 A, Oslo میں واقع ہے۔


ٹیلی فون: ‎+47 22 11 69 20

MiRA مرکز کی ویب سائٹ

ای میل:  post@mirasenteret.no یا krisehjelp@mirasenteret.no

KORONAKRISEN – HJELP VED VOLD OG OVERGREP

Døgnåpne tjenester:

Er du voksen og trenger selv hjelp eller ønsker å hjelpe en annen voksen?

Er du bekymret for et barn eller trenger hjelp i omsorgen for barn?

På nettsidene våre finner du oversikt også over andre hjelpetilbud. Det varierer hva de ulike tjenestene kan tilby i øyeblikket. Vi anbefaler deg likevel å ta kontakt og sjekke ut hvilken hjelp du kan få. Spørsmål- og svartjenesten på dinutvei.no er også åpen.